پیپلزپارٹی اور اے این پی، پی ڈی ایم چھوڑنے کے فیصلے پر نظرِ ثانی کریں: مولانا فضل الرحمٰن

پاکستان میں حزبِ اختلاف کی جماعتوں کے اتحاد پاکستان ڈیمو کریٹک موومنٹ (پی ڈی ایم) کے سربراہ مولانا فضل الرحمٰن نے کہا ہے کہ پاکستان پیپلز پارٹی (پ پی پی) اور عوامی نیشنل پارٹی (اے این پی) کے پاس اب بھی پی ڈی ایم میں واپس آنے کا موقع موجود ہے۔

منگل کو پی ڈی ایم کے سربراہی اجلاس کے بعد میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے مولانا فضل الرحمٰن کا کہنا تھا کہ اس میں کوئی ابہام نہیں کہ دونوں جماعتوں نے پی ڈی ایم کو چھوڑ دیا ہے۔ لیکن ہم اب بھی اُن کو موقع دے رہے ہیں کہ وہ اپنے فیصلوں پر نظرِ ثانی کریں۔

فضل الرحمٰن کا کہنا تھا کہ پی پی پی اور اے این پی کے عہدے داروں کے استعفے موصول ہو گئے ہیں۔ لیکن وہ فوری طور پر انہیں منظور نہیں کر رہے۔

اُن کا کہنا تھا کہ پی ڈی ایم میں شامل تمام جماعتوں کی حیثیت برابر ہے۔ تنظیمی ڈھانچے کے تحت اتحاد میں شامل جماعتوں سے وضاحت طلب کی گئی تھی۔

فضل الرحمٰن کا کہنا تھا کہ دونوں سیاسی جماعتوں کے قد کاٹھ کا تقاضہ تھا کہ وہ باوقار انداز میں وضاحت کا جواب دیتے لیکن اُنہوں نے کوئی اور راستہ اختیار کیا۔

مولانا فضل الرحمٰن کا کہنا تھا کہ ہم کبھی نہیں چاہتے تھے کہ پی ڈی ایم میں شامل جماعتوں کے مابین عہدوں کی لڑائی ہو۔

یاد رہے کہ پی ڈی ایم کے سربراہ مولانا فضل الرحمٰن نے سینیٹ میں اپوزیشن لیڈر کے عہدے کے لیے حکومتی بینچز کے سینیٹرز سے ووٹ لینے پر پیپلز پارٹی اور عوامی نیشنل پارٹی کو اظہار وجوہ کے نوٹس جاری کیے تھے۔

نوٹس پر ناراضگی کا اظہار کرتے ہوئے عوامی نیشنل پارٹی نے پی ڈی ایم سے علیحدگی جب کہ پیپلزپارٹی نے پی ڈی ایم کے تمام عہدوں سے مستعفی ہونے کا اعلان کیا تھا۔

Photo Credit : https://pioussluts.files.wordpress.com/2011/07/219542-fazlurrehmanphotoppi-1311880051-171-640×480.jpg

Leave a Reply

Your email address will not be published.

%d bloggers like this: