برطانوی رکن پارلیمان ڈیوڈ ایمیس قاتلانہ حملے میں ہلاک

برطانوی عہدے داروں نے بتایا ہے کہ برطانوی پارلیمنٹ کے ایک رکن ڈیوڈ امیس جنوب مشرقی برطانیہ میں اپنے آبائی ڈسٹرکٹ کے ایک چرچ میں جمعے کو اس وقت کئی بار چاقو کے وار کے بعد ہلاک ہو گئے جب وہ اپنے حلقے کے ووٹروں سے ملاقات کر رہے تھے۔

69 سالہ ڈیوڈ امیس قدامت پسند پارٹی کے ایک رکن تھے اور انگلینڈ کے ایسیکس میں ساوتھ اینڈ ویسٹ کی نمائندگی کرتے تھے۔

برطانوی وزیر اعظم بورس جانسن نے ڈیوڈ امیس کی ہلاکت پر گہرے صدمے اور غم کا اظہار کرتے ہوئے کہا ہے کہ ہمارے دل دکھ سے بھرے ہوئے ہیں۔ انہوں نے جانوروں پر ظلم روکنے کے لئے رکن پارلیمان کی خدمات کو سراہا اور انہیں برطانوی سیاست کے انتہائی مہربان، مہذب اور شائستہ افراد میں سے ایک قرار دیا۔

پولیس کا کہنا ہے کہ ایک 25 سالہ مشتبہ شخص حراست میں ہے۔

ایسیکس پولیس نے ایک بیان میں کہا ہے کہ ’’ہم اس واقعے کے سلسلے میں کسی اور کی تلاش نہیں کر رہے ہیں؛ اور ہمارے خیال میں اس وقت عوام کو کوئی خطرہ لاحق نہیں ہے”۔

امیس، جو 1983 سے رکن پارلیمنٹ تھے، شادی شدہ تھے اور ان کے پانچ بچے ہیں۔

Photo Credit : https://www.maldonandburnhamstandard.co.uk/resources/images/8866626.jpg?display=1&htype=0&type=responsive-gallery

Leave a Reply

Your email address will not be published.