آسٹریلیا کو آبدوزوں کی فراہمی کے معاملے پر تناؤ، امریکی وزیرِ خارجہ فرانس جائیں گے

امریکہ اور فرانس کے درمیان حالیہ دنوں میں ہونے والی کشیدگی کے بعد امریکی وزیرِ خارجہ اینٹی بلنکن آئندہ ہفتے پیرس کا دورہ کر رہے ہیں۔

ہمارہ ہند کے مطابق یہ دورہ ایک ایسے وقت میں ہوا ہے جب آسٹریلیا ، برطانیہ اور امریکہ کے درمیان بڑھتی ہوئی سہ فریقی سیکیورٹی شراکت داری پر فرانس اور امریکہ کے درمیان کشیدگی بڑھ گئی ہے۔

مبصرین کا خیال ہے کہ اینٹنی بلنکن، جن کے فرانس کے ساتھ مضبوط ذاتی تعلقات ہیں، اپنے اس دورے میں امریکہ اور فرانس کے تعلقات بہتر کرنے کی کوشش کریں گے۔

امریکی وزیرِ خارجہ اپنے دورے میں پانچ اور چھ اکتوبر کو ہونے والے اقتصادی تعاون اور ترقی کی تنظیم کے وزارتی کونسل کے اجلاس کی صدارت کریں گے۔ یہ اجلاس تنظیم کی 60 ویں سالگرہ کے موقع پر ہو رہا ہے۔

اینٹی بلنکن فرانس کے وزیرِ خارجہ ژاں ژیو یدگیان سے پیرس میں دوطرفہ ملاقات بھی کریں گے۔

امریکی محکمۂ خارجہ کے جمعے کو جاری بیان میں کہا گیا ہے کہ اینٹی بلنکن اپنے فرانسیسی ہم منصب سے ملاقات میں انڈو پیسیفک خطے میں سیکیورٹی، آب و ہوا کے بحران، عالمی وبا کرونا وائرس سے معیشت کی بحالی، ٹرانس اٹلانٹک تعلقات پر گفتگو کریں گے۔

اس کے علاوہ دونوں سفارتکار عالمی مواقع اور چیلنجز سے نمٹنے کے لیے اتحادیوں کے ساتھ کام کرنے کے سمیت مختلف معاملات پر امریکہ اور فرانس کے تعلقات مزید مضبوط کرنے پر تبادلۂ خیال کریں گے۔

امریکہ فرانس کشیدگی

امریکہ کے صدر جو بائیڈن کی انتظامیہ نے 15 ستمبر کو آسٹریلیا اور برطانیہ کے ساتھ ایک نئے سیکیورٹی معاہدے کا اعلان کیا تھا۔

معاہدے کے تحت آسٹریلیا کو آٹھ جوہری ٹیکنالوجی سے کام کرنے والی آب دوزیں بنانے میں مدد کی جائے گی۔ آبدوزوں کا یہ بیڑا امریکہ کی ٹیکنالوجی کا استعمال کرتے ہوئے مقامی سطح پر تیار کیا جائے گا۔

یہ معاہدہ آسٹریلیا کے فرانس سے ڈیزل الیکٹرک آبدوزوں کے لیے کیے گئے معاہدے سے دست برداری کے بعد سامنے آیا تھا جس پر فرانس کی جانب سے ناپسندیدگی کا اظہار کیا گیا تھا۔

فرانس نے اس اعلان کے بعد دو روز میں ہی امریکہ اور آسٹریلیا سے اپنے سفیر واپس بلا لیے تھے۔

فرانسیسی وزیرِ خارجہ نے قرار دیا تھا کہ امریکہ میں ‘اعتماد کا بحران’ ہے۔

بعد ازاں آبدوزوں کے معاہدے پر کشیدگی میں کمی کے لیے امریکہ کے صدر جو بائیڈن اور فرانس کے صدر ایمانول میخواں کے درمیان ٹیلی فونک رابطہ ہوا تھا۔

دونوں رہنماؤں نے فیصلہ کیا تھا کہ وہ ‘اعتماد’ کو یقینی بنانے کے لیے ‘مشاورت کے عمل کا آغاز’ کریں گے۔

دونوں سربراہان نے اس بات پر اتفاق کیا تھا کہ وہ اکتوبر کے اواخر میں یورپ میں ملاقات کریں گے۔

میخواں نے یہ بھی فیصلہ کیا تھا کہ آئندہ ہفتے میں فرانس کے سفیر دوبارہ واشنگٹن جائیں گے۔

Photo Credit : https://arc-anglerfish-washpost-prod-washpost.s3.amazonaws.com/public/HYSF7NX5ZYI6XB7APYD33HHCOA.jpg

Leave a Reply

Your email address will not be published.