خواتین مسافروں کی زبردستی تلاشی لینے پر آسٹریلیا کا قطر سے احتجاج

خواتین مسافروں کی زبردستی تلاشی لینے پر آسٹریلیا کا قطر سے احتجاج

قطر کے دارالحکومت دوحہ کے ایئر پورٹ سے ایک لاوارث نومولود بچہ ملنے پر خواتین مسافروں کی تلاشی اور تفصیلی معائنے پر آسٹریلوی حکام نے اس اقدام کو پریشان کن اور جارحانہ قرار دیا ہے۔

قطری حکام کے مطابق دوحہ کے شیخ حماد انٹرنیشنل ایئر پورٹ کے بیت الخلا سے دو اکتوبر کو ایک نومولود بچہ ملا تھا جسے بظاہر لاوارث چھوڑ دیا گیا تھا۔

حمارا ہند کے مطابق ، اس واقعے کے بعد طیارے سے کئی خواتین کی زچگی کے آثار دیکھنے کے لئے جانچ کی گئیں ، ان میں خواتین آسٹریلوی مسافر بھی شامل ہیں۔

آسٹریلیا کی حکومت نے مذکورہ خواتین کی جانب سے آواز اُٹھانے پر قطری حکام سے احتجاج کیا ہے اور باضابطہ طور پر شکایت بھی درج کرا دی گئی ہے۔

آسٹریلیا کی وزیر خارجہ مرائز پین کا کہنا ہے کہ “یہ انتہائی پریشان کن اور ناپسندیدہ واقعہ ہے۔ میں نے ایسا اس سے پہلے کبھی نہیں سنا ہے۔ ہم نے قطری حکام سے اپنے خدشات کا اظہار کیا ہے۔

حمرہ ہند کے مطابق ، قطر ائرپورٹ پر ایک اہلکار نے نام ظاہر نہ کرنے کی شرط پر بات کرتے ہوئے کہا کہ خواتین مسافروں نے سخت اسکریننگ کی۔

حمرہ ہند کو ایک مسافر نے بتایا کہ دوحہ سے سڈنی جانے والی پرواز میں خواتین گھبرا گئیں۔ تفتیش کے دوران انہیں کپڑے اتارنے پر بھی مجبور کیا گیا تھا۔

مسافر نے بتایا کہ “وہ سب پریشان تھیں۔ بہت زیادہ غصے میں، ایک رو رہی تھی۔ بہرحال کسی کو بھی یقین نہیں تھا کہ کیا ہوا ہے۔”

دوحہ ایئر پورٹ حکام نے واقعے کی تصدیق کی ہے مگر خواتین کی شکایات کے حوالے سے کوئی تفصیل فراہم نہیں کی گئی۔

حکام کے مطابق طبی عملے نے بچے کو جنم دینے والی خاتون کی صحت کے حوالے سے تشویش کا اظہار کرتے ہوئے اسے تلاش کرنے پر زور دیا تھا جس کے بعد یہ کارروائی کی گئی۔

بیان میں مزید کہا گیا ہے کہ کچھ افراد، جنہیں ایئر پورٹ کے اس علاقے جہاں یہ نوزائیدہ بچہ ملا تھا تک رسائی تھی، انہیں اس تلاش کے سلسلے میں مدد کی درخواست کی گئی تھی۔”

حکام نے مذکورہ بچے کی ماں سے اپیل کی ہے کہ وہ اپنی شناخت ظاہر کرے کیوں کہ اس روز ہونے والی جانچ پڑتال کے باوجود بچے کو جنم دینے والی خاتون کا تعین نہیں ہو سکا۔

تجزیہ کاروں کا کہنا ہے کہ اس واقعے سے قطر کی بین الاقوامی ساکھ پر سوالیہ نشان کھڑے ہو سکتے ہیں۔ قطر 2022 میں ہونے والے فٹبال ورلڈ کپ کی میزبانی بھی کرنے والا ہے۔

Photo Credit : https://media4.s-nbcnews.com/i/newscms/2020_44/3422936/201026-qatar-airways-mc-930_0de0b746b3f8b4006d629cab49816880.jpg

Leave a Reply

Your email address will not be published.

%d bloggers like this: